تائیوان میں گیس پائپ لائن پھٹنے سے 15 افراد ہلاک، 233 زخمی
کراچی: سمندرمیں ڈوب کرجاں بحق ہونے والوں کی تعداد23ہوگئی
کراچی کا خو نی ساحل ، ڈوبنے والے31 افرادکی لاشیں نکال لی گئیں
حکومت عمران خان اور طاہرالقادری سے مذاکرات کیلئے تیار ہے، سعد رفیق
میچ فکسنگ پر7 سال نہیںعمرقیدکی سزا ہونی چاہئے،جاوید میانداد
تائیوان میںگیس پائپ لائن دھماکے، ہلاکتیں 25ہو گئیں
سابق پاکستانی سفیر سید احسان ریاست ٹیکساس میں انتقال کر گئے

 

 
 
 
 
 
 
 
 
 
 
  ادارتی صفحہ  
 
 
Triology of agony...کشور ناہید...لیاری کا حزنیہ
 
دمکتے مہر و وفا کے بادل
کفن کی دہلیز پہ اتر کے
جھلس گئے ہیں
وہ جو شادیاں تھی
سلگتے جسموں، ابلتے خوں ہیں
بدل گئی ہیں
وہ جو خواب رکھے نشیمنوں میں
انہیں جلایا ہے اور ضیافتِ شام کی گئی ہے
وہ جو صبح سورج سے جاگتی تھی
اسے بھی خود کش بموں کی مٹھی میں دے دیا ہے
وہ پھول جیسے حسیں بچے بھی
خوں کی بارش میں سو رہے ہیں
ہر ایک آنگن، ہر اک گلی میں
سروں پہ اوڑھے وہ بیوگی کی سفید چادر
صحن میں بیٹھی یہ پوچھتی ہے
مجھے دلاسہ دیا گیا ہے
کہ وہ تو جنت چلا گیا ہے
میں صبر کی عمر کیسے کاٹوں
میں اپنے بچوں کو مدرسے میں نہ جانے دونگی
مجھے تو ان کو
حسیں جواں ان کے باپ جیسا ہی
دیکھنا ہے
پہاڑ جیسی یہ عمر کاٹوں تو کیسے کاٹوں!
………………
ہزارہ بستی والوں کاحزنیہ
وقت کا دریا خون میں لپٹا
میرے شہر میں ٹھہرا ہے
سال کے ہر اک سانس میں خوں ہے
ہر دروازے، ہر چوکھٹ پہ خون کے دھبے
پوچھ رہے ہیں
کیا یہ بستی وہی بستی ہے
جس میں ہنستے پھول سے بچے تھے
مہندی رچائے سہاگنیں تھیں
اور کڑیل جواں ایسے تھے
ان کو دیکھ دعائیں
ہونٹوں پہ آجاتی تھیں
اب تو کفن کے بادلوں سے یہ شہر اٹا ہوا ہے
ہر گھر میں کھلنڈرا بچہ ڈرا ہوا ہے
کیا یہ بستی وہی بستی ہے
جہاں چراغ قبروں پہ نہیں
گھروں میں جلا کرتے تھے
جہاں اجلی عورتیں ہنستی تھیں
اور بوڑھے باپ کے کندھے بھی چوڑے تھے
آج سبھی دالانو میں سائے گھوم رہے ہیں
کوئی دلاسہ دینے والا حرف
کسی دامن میں نہیں ہے۔
……………
شامی نقل مکانیوں کا حزنیہ
ہمیں شہر بدر کرنے کو کہا تو کسی نے نہیں تھا
گولیوں کی بوچھاڑ میں جب اپنے
اتنی دور ہوئے کہ ہمیں لمبی لمبی قبریں بناکر
انہیں دفن کرنا پڑا
جب خوف کے مارے
ہماری چھاتیوں کا دودھ خشک ہوگیا
جب ہماری خیمہ بستیوں کو نذر آتش
کیا گیا
جب زمین کا کوئی کونہ ہمیں پناہ دینے سے
گریزاں تھا
اے ہماری وطن شام کی سرزمین
ہماری آبا، بی بی زینب کی سرزمین
ہمیں مجھے الوداع کہنا پڑا
یہ ہمارے قدموں نے مجھے الوداع کہا ہے
ہماری آنکھیں ابھی تک
تیری انگور کی بیلوں میں ٹھہری ہوئی ہیں
شفتالو کا ذائقہ ابھی تک ہماری زبان پر ہے
طرح طرح کے خوان آتے ہیں
لوگ چھپ کر اور ظاہر میں بھی
ہمارے لئے زیتون اور عرق لے کر آتے ہیں
مگر اے ہماری بستی، ہماری خیمہ بستی
ہمیں وہ پیاس یاد آتی ہے
اس زمین کی خوشبو یاد آتی ہے
جہاں ہم نے گھٹنیوں چلنا
سیکھا تھا اور ہم تیری مٹی سے کھیلتے تھے
ہماری مسکراہٹ اسی دن واپس آئے گی
جب ہمارے قدم
اے ہمارے وطن سرزمین شام، شہر دمشق
تو ہمارا استقبال دف بجا کر کر گیا
Print Version       Back  
کون جانے عالم اسلام کو
کتنی جانیں پیش کرنی ہیں مزید
عید بھی قربانیاں لے کر گئی
اے خدا! یہ عید تھی یا ...
 
 
 
کوئی مستند اور فول پروف حقائق جمع کرنے کی کوشش میں ناکامی کی وجہ سے ہمارے خود اپنے بارے میں ’’صحیح اندازے‘‘ بہت حد تک مشکوک اور گمراہ کن ہو سکتے ہیں جو ہمارے منصوبے ...
 
 
 
سندھ اسمبلی کی ڈپٹی اسپیکر اور پاکستان پیپلز پارٹی کی خاتون رہنما سیدہ شہلا رضا نے ایک ٹی وی پروگرام میں یہ انکشاف کیا ہے کہ پاکستان میں 15سال تک مارشل لاء نہ لگانے کا ...
 
 
 
میں اس وقت دیارِ عیسویں کی اکیسویں سٹریٹ پر کھڑا ہوں۔مجھے اس مصروف ترین گلی میں آتے جاتے ہوئے زیادہ تر لوگ مرغ ِ سر بریدہ دکھائی دے رہے ہیں۔تقریباً ہر شخص نے اپنے سرپر ...
 
 
 
SMS: #FCC (space) message & send to 8001
farooq.chohan@janggroup.com.pk
14اگست کادن جوں جوں قریب آرہاہے وطن عزیز کے سیا سی افق پرغیر یقینی کے سائے بڑھتے چلے ...
 
 
 
SMS: #GNM (space) message & send to 8001
میرے پچھلے کالم کاعنوان تھا’’آئیے آئین سے رہنمائی حاصل کریں‘‘ چونکہ اس کالم میں زیادہ تر ذکر بلوچستان اورسندھ میں پانی کے ...
 
 
 
SMS: #HAC (space) message & send to 8001
abidi@janggroup.com.pk
س۔ میرے بیٹے نے انڈسٹریل انجینئرنگ کی ڈگری یو ای ٹی لاہور سے پاس کی ہے برائے کرم مجھے بتائیں کہ اس ...
 
 
 
SMS: #AMM (space) message & send to 8001
قارئین کی دلچسپی کیلئے اس بار میرے کالم کے مخاطب امریکہ میں بسنے والے بعض وہ پاکستانی امریکی ہیں جو امریکہ کے سیاسی نظام میں ...